نواب شاہ:سربراہ واٹر کمیشن کا فلٹریشن پلانٹ کا دورہ 

101

نواب شاہ(آن لائن)عدالت عظمیٰ کی جانب سے مقرر کردہ واٹر کمیشن کے سربراہ سابق چیف جسٹس عدالت عظمیٰ جسٹس امیر ہانی مسلم نے نواب شاہ میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے واٹر فلٹریشن پلانٹ ، واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ ، روہڑی کینال، واٹر سپلائی فیز فائیو کے منصوبوں کا دورہ کیا ۔ اربوں روپے خرچ کرنے کے باوجود شہر کی 5 لاکھ سے زائد آبادی پینے کے صاف پانی سے محروم گندگی سے بھرے تالابوں سے پانی کی فراہمی پر شدید برہمی کا اظہار۔ دورے کے دوران میونسپل کمیٹی کے چیئر مین اور وائس چیئرمین غائب،شہریوں کا احتجاج۔جسٹس(ر)امیر ہانی مسلم کوبریفنگ میں بتایا گیا کہ مذکورہ فلٹریشن پلانٹ ایک ارب 54 کروڑ روپے کی لاگت سے قائم کیا گیا اور اس کی روزانہ صاف پانی کی پیداوار ایک کروڑ40 لاکھ گیلن ہے جسے شہریوں کو فراہم کیے جانے کے بعد بقایا پانی کمپنیوں کو فروخت کیا جائے گا جس سے ملنے والی آمدنی پلانٹ کی مرمت پر خرچ ہوگی۔اس موقع پر شہریوں نے واٹر کمیشن کے سربراہ کو بتایا کہ ایک کروڑ 40لاکھ گیلن فراہمی کے بجائے روزانہ15 لاکھ گیلن پانی فراہم کیا جا رہا ہے جس پر جسٹس امیر ہانی مسلم نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے انتظامیہ سے پانی فراہمی کی مکمل رپورٹ طلب کرلی۔ بعد ازاں جسٹس(ر)امیر ہانی مسلم نے روہڑی کینال کے ساتھ بنائے گئے پینے کے پانی کے تالابوں کے دورے کے دوران تالابوں کی انتہائی خراب صورتحال پر برہمی کا اظہار کیا اور انہوں نے ٹی ایم او کو طلب کیا ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ