کرپشن فری پاکستان صرف نظام مصطفٰیؐ سے ممکن ہے، سراج الحق

394
لاہور: سابق گورنر چودھری محمد سروراور محمود الرشید منصورہ میں امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق سے ملاقات کررہے ہیں، ڈاکٹر وسیم اختر بھی موجود ہیں
لاہور: سابق گورنر چودھری محمد سروراور محمود الرشید منصورہ میں امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق سے ملاقات کررہے ہیں، ڈاکٹر وسیم اختر بھی موجود ہیں

لاہور (نمائندہ جسارت)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے ملک پر ظالمانہ استحصالی اور کرپشن کا نظام مسلط ہے لوگوں کو اپنی مرضی کے مطابق زندگی گزارنے کی سہولت حاصل نہیں،عام آدمی تعلیم، صحت، روزگار اور انصاف سے محروم ہے، سودی نظام نے ملکی معیشت کو تباہ کردیا ہے،عدالتوں، تھانے اور کچہری اور پٹوارخانے میں غریب کی شنوائی نہیں، ملک اندرونی اور بیرونی خطرات میں گھرا ہوا ہے، ان مسائل کا حل مارشل لا، مغربی جمہوریت یا سیکولر اور لبرل نظام میں نہیں۔

 ہم کرپشن اور جہالت فری پاکستان چاہتے ہیں جو صرف نظام مصطفی ؐکے نفاذ ہی سے ممکن ہے،70سال میں ملک پر مارشل لا جمہوریت کے لبادے میں مسلط رہا، شخصی آمریت نے تمام ریاستی اداروں کو تباہی و بربادی سے دوچارکردیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے منصورہ میں جاری تربیت گاہ کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کیا، تربیت گاہ سے لیاقت بلوچ اور حافظ ساجد انور نے بھی خطاب کیا۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ 3،3 باریاں لینے والے ایک بارپھر عوام کو دھوکا دینے کی کوشش کررہے ہیں۔ یہ سیاسی پنڈت اور برہمن سیاست اور جمہوریت کو اپنے گھر کی لونڈی سمجھتے ہیں۔ اسی لیے انہوں نے اپنی جماعتوں کو جمہوری پارٹیاں بنانے کے بجائے موروثی اور خاندانی پراپرٹیاں بنا لیا ہے اور اب یہ خاندان اپنی تیسری پشت پاکستان پر مسلط کرنے کے چکر میں ہے لیکن ا ب یہ کرپٹ اور بدیانت ٹولہ بے نقاب ہوچکا ہے اور عوام ان کے خونخوارچہروں کو اچھی طرح پہچان چکے ہیں۔

عوام کی محرمیوں کی اصل مجرم ہی کرپٹ اشرافیہ ہے جس نے تمام وسائل پر خود قبضہ کررکھا ہے اور عوام کو غربت جہالت اور بد امنی کی بھٹی میں جھونک رکھا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عدالتوں کے دروازے سونے کی چابی سے کھلتے ہیں اس لیے کسی غریب کو انصاف ملنے کی کوئی امید نہیں،تعلیمی اداروں میں طبقاتی نظام تعلیم ہے ۔اسپتالوں میں عام مریض کو علاج کی سہولت حاصل نہیں ۔عوام کاکام صرف ٹیکس اور بل دینا رہ گیا ہے ،پیسوں سے حکمران عیاشی اور قومی دولت لوٹ کر اپنے بیرونی بینکوں کے اکاؤنٹس بھرتے ہیں۔تھانوں پٹوارخانوں میں انسان کی بے توقیری کی جاتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ طبقاتی اور استحصالی نظام سے نجات کا ایک ہی راستہ ہے کہ بار بار آزمائے ہوؤں کو دوبارہ مسلط ہونے کا موقع نہ مل سکے۔اس لیے عوام کو کرپشن سے پاک اور دیانت دار قیادت کا انتخاب کرنا ہوگا۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ جماعت اسلامی کرپشن فری کلین اور گرین پاکستان کے لیے جدوجہد کررہی ہے تاکہ ہماری آئندہ نسلیں غربت ،جہالت ،بے روزگاری مہنگائی اور بدامنی جیسے مسائل سے بچ سکیں۔

جماعت اسلامی کی دیانت و امانت کو قومی و بین الاقوامی ادارے سراہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام ملکی مسائل کا حل نظام مصطفیؐ اور شریعت کے نظام میں ہے عوام اگر اطمینان اور سکون کی زندگی چاہتے ہیں تو انہیں کرپٹ ٹولے او ردھوکے بازوں کے فریب سے نکلنا ہوگا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ