گوادرکے عوام اپنے مسائل و حقوق کیلیے خود جدوجہدکریں

70

گوادر (نمائندہ جسارت )گوادر مقامی باشندوں کی ملکیت ہے، گوادر عوام کو اپنے مسائل و حقوق کیلیے خود جدوجہد کرنا ہوگی،منتخب نمائندوں نے عوام کو مایوس کیا ہے ، منتخب نمائندوں نے صرف اپنی پارٹی کے لوگوں کو مراعات سے نوازا ہے۔ نیوٹاؤن و مانبر ہاؤسنگ اسکیموں میں پلاٹوں کو سیاسی رشوت کے طور پر بندر بانٹ کیا گیا ۔ گوادر میں بیورو کریسی بے لگام ہے۔ ان خیالات کا اظہار گوادر کے بنیادی مسائل پر شہدائے جیونی چوک پر گوادر ساحل کے احتجاجی مظاہرے سے مولابخش مجاہد، مراد ملنگ اور مصطفی رمضان سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ مقررین کا کہنا تھا کہ عالمی شہرت یافتہ گوادر آج بھی پانی ، صحت ، روزگار و تعلیم جیسے بنیادی مسائل سے دوچار ہے ۔ منتخب نمائندے بیوروکریسی کے ساتھ ملکر گوادر کی زمینوں کے بندر بانٹ اور کرپشن میں مصروف ہیں ۔ گوادر میں ایک پٹواری بھی ارب پتی بن جاتا ہے بیوروکریسی بے لگام گھوڑے کی مانند ہوچکی ہے ۔ منتخب نمائندوں نے عوام کو مایوسی کے سوا کچھ نہیں دیا ۔ گزشتہ دور حکومت میں شامل جماعت نے تمام مراعات سے صرف اپنے پارٹی والوں کو نوازا ۔ گوادر کے غریب ماہی گیر کی کسی نے فکر نہیں کی ۔ مقررین کا کہنا تھا کہ گزشتہ روز ہونے والے ایکسپو کی وجہ سے ماہی گیروں کو تین دن تک سمندر میں شکار پر جانے سے روکنا ماہی گیروں کے معاشی قتل کے مترادف تھا اگر ماہی گیر ایک دن سمندر نہ جائیں تو ان کا چولہانہیں جلتا ماہی گیروں کو تین دن تک فاقہ کشی پر مجبور کیا گیا ۔ غیر قانونی ٹرالنگ کی وجہ سے ماہی گیر پہلے سے پریشان ہیں ۔ ٹرالرز نے سمندر کو بانجھ کر دیا ہے ۔ محکمہ فشریز ٹرالنگ کے خلاف کارروائی کرنے سے گریزاں ہے ۔ محکمہ فشریز کے اہلکار بھتا خوری میں ملوث ہیں ۔ حکومت ان کے خلاف کارروائی کرے اور غیر قانونی ٹرالنگ کی روک تھام کی جائے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ