عام انتخابات کے شیڈول کا اعلان 27 مئی کو کیا جائیگا ،الیکشن کمیشن 

914

اسلام آباد (خبر ایجنسیاں ) الیکشن کمیشن نے سینیٹ انتخابات کا با ضابطہ شیڈول جاری کر دیا ، اسلام آباد اور فاٹا کا الیکشن شیڈول روک دیا گیاجبکہ سیکرٹری الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ عام انتخابات کے شیڈول کا اعلان 27مئی 2018ء کو کردیا جائے گا جبکہ انتخابات 28جون کو متوقع ہیں۔تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن آف پاکستان نے چاروں صوبوں کے لیے سینیٹ انتخابات کا شیڈول جاری کردیا، شیڈول کے مطابق سینیٹ انتخابات کے لیے پولنگ 3 مارچ کو صوبائی اسمبلیوں میں ہوگی۔شیڈول کے مطابق سینیٹ انتخابات کے امیدوار 4 سے 6 فروری تک کاغذات نامزدگی جمع کرا سکیں گے جبکہ کاغذات
نامزدگی کی جانچ پڑتال 9 فروری کو ہوگی۔الیکشن کمیشن شیڈول کے مطابق امیدواروں کی حتمی فہرست 15 فروری کو جاری کی جائے گی جبکہ امیدوار 16 فروری تک کاغذات نامزدگی واپس لے سکیں گے۔الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ اسلام آباد اور فاٹا میں سینیٹ انتخابات کاشیڈول بعد میں جاری کیا جائے گا۔دوسری جانب جمعے کو پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس چیئر پرسن ڈاکٹرشیزرامنصب کھرل کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوا ۔قومی و شماریاتی ادارے الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے حلقہ بندیوں اور عام انتخابات 2018ء کی تیاریوں کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی ۔سیکرٹری الیکشن کمیشن آف پاکستان بابر یعقوب فتح محمد نے بتایا کہ فاٹا تک انتخابی قانون 2017ء کو توسیع دینے اور اسلام آباد میں سینیٹ کے انتخابات کے طریقہ کار کے بارے میں صدارتی اجازت کے لیے دونوں سمریاں تیار کرلی گئیں ہیں ۔ وزیراعظم کو ارسال کردی گئی ہیں انہوں نے بتایا کہ فاٹا کے بارے میں سمری کی تیاری کے لیے 3 وزارتوں کا کردار تھا اس لیے شاید یہ بروقت تیار نہ کی جاسکی ہوگی ۔ اس میں فاٹا سیکرٹریٹ وزارت سیفران اور وزارت قانون و انصاف کی ورکنگ درکار تھی ۔ سیکرٹری الیکشن کمیشن نے مزید بتایا کہ 28فروری سے قبل انتخابی حلقہ بندیوں کے کام کو مکمل کرلیا جائے گا۔ 3 مارچ کو ابتدائی حلقہ بندیوں کا اعلان کردیا جائے گا۔ 3 اپریل تک پٹیشنز وصول کی جائیں گی 3ہزار پیٹیشنز موصول ہونے کا امکان ہے ۔ 3 مئی ان پٹینشز کو نمٹادیا جائے گا اور حتمی حلقہ بندیوں کا اعلان کردیا جائے گا۔ 26-27مئی کو عام انتخابات کے شیڈول کا اعلان کردیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن اس وقت سینیٹ انتخابات ، انتخابی فہرستوں کی تیاری ، حلقہ بندیوں اور عام انتخابات کے اہم آئینی انتظامات میں مصروف عمل ہے ہم ڈیڑھ سال سے کہہ رہے تھے کہ ہمیں قانون سازی کردیں اب ہم نے اپنی معمول کی تعطیلات بھی ختم کردی ہیں اور کام کررہے ہیں ۔ حلقہ بندیوں کی پٹیشنز کی شنوائی کے لیے 5رکنی لارجر بینچ بیٹھے گا کیونکہ سابق حلقہ بندیوں کے حوالے سے ہر صوبے کے رکن کو انتخابی پٹیشنز سننے کا اختیار دیا گیا تھا مگر صوبوں سے شکایتیں موصول ہوئیں تھیں اس لیے اسلام آباد میں یہ بینچ تشکیل دیا گیا ہے اور حلقہ بندیوں کی کمیٹیاں قائم کردی گئی ہیں ۔ ان کے نام نہیں بتاسکتے ۔ چیف الیکشن کمیشن کی ہدایت پر ان کو خفیہ رکھا جارہا ہے تاکہ حلقہ بندیوں کے معاملات میں شفافیت کو برقرار رکھا جاسکے ۔ متعلقہ حکام نے بتایا کہ پنجاب میں آبادی میں اضافے کی شرح کم ہے خیبرپختونخوا میں زیادہ ہے بلوچستان میں 1998ء کی مردم شماری کے دوران کئی علاقوں میں مردم شماری نہیں ہوسکی تھی جبکہ اب سارے صوبے میں مردم شماری کرنے میں کامیاب رہے ہیں ۔ قائمہ کمیٹی نے انتخابی تیاریوں کے بارے میں کمیٹی کو باقاعدگی سے آگاہ رکھنے کی سفارش کی ہے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ