پاکستان ،افغانستان اور بھارت میں زلزلے ،بلوچستان میں بچی جاں باحق،متعدد زخمی

119
لوئر دیر کے علاقے تیمر گرہ میں زلزلے کے باعث خوفزدہ شہریوں کی بڑی تعداد گھروں سے باہر نکلی ہوئی ہے
لوئر دیر کے علاقے تیمر گرہ میں زلزلے کے باعث خوفزدہ شہریوں کی بڑی تعداد گھروں سے باہر نکلی ہوئی ہے

لاہور،اسلام آباد، مظفر آباد، مانسہرہ ، ایبٹ آباد، کوئٹہ، کابل، نئی دہلی، سری نگر(مانیٹر نگ ڈ یسک+خبر ایجنسیاں )پاکستان،بھارت اور افغانستان میں زلزلے کے شدید جھٹکے،بلوچستان میں زلزلے کے باعث ایک کمسن بچی جاں بحق اور متعدد افراد زخمی ہوگئے۔ زلزلے کے جھٹکے سب سے پہلے بلوچستان کے سرحدی ضلع لسبیلہ کے علاقے بیلہ میں محسوس کیے گئے۔ ملک کے شمالی علاقہ جات کے لیے ہنگامی ریڈ الرٹ جاری کر دیا گیا ہے۔ پاکستان میٹرولوجیکل ڈپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر جنرل غلام رسول کے مطابق زلزلے کی شدت 6.2 ریکارڈ کی گئی جس کی گہرائی 169 کلو میٹر تھی جب کہ زلزلہ ہندوکش کے پہاڑی سلسلے میں آیا جس کا مرکز چترال سے 140 کلو میٹر شمال مغرب میں افغانستان کا علاقہ فیض آباد تھا۔ڈی جی میٹ نے بتایا کہ پہلے صبح 10 بجے کے قریب بلوچستان کے علاقے بیلہ میں 4.9 شدت کا زلزلہ آیا جس کی گہرائی 29 کلو میٹر تھی۔خیبرپختونخوا، پنجاب، گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر سمیت ملک کے مختلف شہروں میں زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کیے گئے جس کا وقت 12 بج کر 7 منٹ تھا۔ اسلام آباد،راولپنڈی، لاہور، پشاور،ملتان،بھکر،ٹوبہ ٹیک سنگھ،حافظ آباد، گوجرانوالہ، کمالیہ،سرگودھا،جہلم،فیصل آباد،جھنگ، ڈیرہ اسماعیل خان اور کمالیہ سمیت دیگر شہروں میں زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کیے گئے۔لاہور میں زلزلے کے کچھ دیر بعد آفٹر شاکس کا سلسلہ بھی جاری رہا جس سے لوگ خوف میں مبتلا ہوکر کھلے علاقوں کی طرف جانکلے۔خیبرپختونخوا میں خیبر ایجنسی،باجوڑ ایجنسی، بنوں ، ہنگو، مانسہرہ اور پاراچنار سمیت دیگر علاقوں میں شدید زلزلہ محسوس کیا گیا ۔پشاور کے ایک اسکول میں زلزلے کے باعث بھگدڑ مچنے سے 4 بچیاں زخمی ہوگئیں۔ بلوچستان کے ضلع لسبیلہ میں صبح 10 بجے آنے والے 4.9 شدت کے زلزلے سے بیلہ کے علاقے میں ایک اسکول کی چھت گر گئی جس سے ایک بچی جاں بحق اور 9 افراد زخمی ہوگئے۔آزاد کشمیر میں بھی زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کیے گئے جہاں کوٹلی، راولاکوٹ، میرپور خاص، پھلندری اور دیگر مقامات پر زلزلے کے شدید جھٹکے محسوس کیے گئے۔گلگت بلتستان میں اسکردو، کھرمنگ، شگر، گھانچے، چلاس میں شدید زلزلہ محسوس کیا گیا۔ملک کے مختلف شہروں میں زلزلے کے باعث لوگ شدید خوف و ہراس میں مبتلا ہوکر گھروں اور دفاتر سے باہر نکل آئے اور کلمہ طیبہ کا ورد کرنے لگے۔اسلام آباد میں زلزلے کے باعث عدالت عظمیٰ میں کیسز کی سماعت کے دوران وکلا اور دیگر افراد عدالت سے باہر آگئے جب کہ سماعت میں کچھ دیر کا وقفہ کردیا گیا۔عدالت عظمیٰ میں نااہلی مدت کیس کی سماعت جاری تھی اور جہانگیر ترین کے وکیل سکندر بشیر دلائل دے رہے تھے تو اس دوران زلزلے کے جھٹکے لگنے پر سکندر بشیر نے کہا کہ یہ دوسری مرتبہ ہوا جب میں دلائل کے لیے روسٹر پرآیا تو زلزلہ آگیا۔اس پر چیف جسٹس جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ تحمل رکھیں کچھ دیر کے آفٹر شاکس ہیں ختم ہو جائیں گے۔ادھر پارلیمنٹ میں بھی صنعت و پیداوار کمیٹی کے ارکان اجلاس میں موجود تھے جو زلزلے کے باعث خوف سے باہر آگئے۔ملک میں زلزلے کی صورتحال سے آگاہ کرنے کے لیے لوگوں نے سوشل میڈیا کا بھی سہارا لیا اور زلزلے کے وقت کی پوسٹ شیئر کیں۔افغانستان اور بھارت میں بھی زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے جہاں دونوں ممالک کے دارالحکومت دہلی اور کابل سمیت دیگر شہروں میں زلزلہ ریکارڈ کیا گیا۔امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق افغانستان میں بھی زلزلے کی شدت 6.2 ریکارڈ کی گئی جب کہ زلزلے کا مرکز کوہ ہندوکش ریجن میں صوبہ بدخشاں کا علاقہ جرم تھا۔مقبوضہ کشمیر کے علاقے سری نگر میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کیے گئے۔ محکمہ موسمیات نے آئندہ چند روز میں مزید زلزلہ آنے کی پیش گوئی کردی ہے۔ محکمہ موسمیات کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ ہلکے اور درمیانی شدت کے زلزلے پاکستان کے کئی علاقوں میں آئندہ چند روز میں آ سکتے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ