سرگودھا میں بھی زیادتی کے بعد لڑکی قتل، ورثا کا احتجاج

329

سرگودھا/ قصور (آن لائن) ننھی زینب سے درندہ صفت انسانوں کا سلوک ابھی بھولا نہیں تھا کہ قصور میں ہی ایک اور کمسن کو قتل کیے جانے کا واقعہ رونما اور سرگودھا سے ایک اور لڑکی کی لاش برآمد ہوگئی۔ پولیس کے مطابق سرگودھا کے علاقے بھلوال میں ایک درندہ صفت شخص نے 18 سالہ ساجدہ کو مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد گلا دبا کر قتل کردیا، لاش کھیتوں سے ملی۔ واقعے کے خلاف مقتولہ کے ورثا نے
لاش سڑک پر رکھ کر شدید احتجاج کیا۔ دوسری جانب پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ لڑکی سے زیادتی اور قتل کرنے والے ملزم کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔علاوہ ازیں قصور کی تحصیل پتوکی سے 3 روز قبل لاپتا ہونے والے چھٹی کلاس کے طالبعلم شراق عرف بوبی کی لاش کماد کے کھیتوں سے برآمد ہوئی۔ مقتول کا والد منور حسین 5 برس سے فالج کے مرض میں مبتلا ہے۔چھٹی جماعت کا طالبعلم مقتول شراق 3 روز قبل شام 6 بجے گھر سے نکلا لیکن واپس نہ آیا۔ پولیس نے طالبعلم کی لاش قبضہ میں لے کر تفتیش شروع کر دی ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ابتدائی تحقیق میں پتا چلا ہے کہ مقتول شراق کو گلا دبا کر قتل کیا گیا لیکن اصل حقائق کا میڈیکل رپورٹ کے بعد پتا چلے گا۔ تاہم مقتول شراق کے لواحقین کا کہنا ہے کہ بچے کے ساتھ زیادتی بھی کی گئی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ