جے آئی ٹی کا سربراہ قادیانی ہے، تبدیل کیا جائے، زینب کے والد کا مطالبہ

477

قصور (آئی این پی) قصور میں زیادتی کے بعد قتل کی جانے والی زینب کے والد نے کہا ہے کہ سانحہ کی تحقیقات کیلیے بنائی گئی جے آئی ٹی کا سربراہ قادیانی ہے، ہماری حکومت سے اپیل ہے کہ کمیٹی کا سربراہ کوئی مسلمان لگایا جائے، بچی کے اغوا کے بعد اگلے دن بچی ٹریس ہوگئی تھی لیکن پولیس نے کسی دلچسپی کا مظاہرہ نہیں کیا، وڈیو کو فرانزک کروا کر تحقیق آگے بڑھائی جاسکتی تھی۔ جمعرات کو میڈیا سے گفتگو کرتے
ہوئے زینب کے والد نے کہا کہ ہمارا احتجاج پر امن ہے، کوشش کریں کہ کسی کی املاک اور گاڑی کو نقصان نہ پہنچائیں، ایسا نہ ہو کہ پر امن احتجاج میں سازشی عناصر شامل ہوجائیں۔ میری عوام سے اپیل ہے کہ احتجاج کو پر امن انداز میں ریکارڈ کرائیں۔ چیف جسٹس اور آرمی چیف سے میں مطمئن ہوں کہ انہوں نے کمیٹی بنائی ہے۔ اگر ماضی میں ہونے والے واقعات پر درست انداز میں کارروائی ہوتی تو یہ سانحہ نہ رونما ہوتا۔ آج اہل علاقہ بچوں کو گھر سے باہر نکالنے پر خوفزدہ ہیں۔ جنسی دہشت گردی کا سدباب کیا جائے تاکہ آئندہ لوگوں کی جان اور عزت محفوظ ہو۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ