حیدرآباد ،احاطہ عدالت میں قیدی کو گولیاں ماکر زخمی کردیا

82

حیدرآباد(نمائندہ جسارت)نامعلوم افراد نے عدالت کے احاطے میں پیشی کے لیے آنے والے قیدی کو گولیاں ماکر زخمی کردیا، ایس ایس پی نے حفاظت پر مامورپولیس اہلکاروں کو معطل کردیا ، ناقص سیکورٹی پر وکلا کا احتجاج۔ تفصیلات کے مطابق سیشن کورٹ حیدرآباد میں صبح10بجے نامعلوم شخص نے پیشی پر لائے گئے ایک قیدی محرم علی جمالی پر فائرنگ کرکے اسے شدید زخمی کردیا اور باآسانی عدالتی احاطے سے فرار ہو گیا۔ عینی شاہدین کے مطابق ایک شخص نے پستول سے مذکورہ قیدی کو 8گولیاں ماریں جس میں سے7گولیاں اس کے جسم میں لگیں ،سول اسپتال کے ڈاکٹرز کے مطابق دو گولیاں پیٹ میں جبکہ 5گولیاں اس کے ہاتھ اور ران میں لگی ہیں۔ پولیس کے مطابق واقعہ پہلے سے جاری دشمنی کا نتیجہ ہے تاہم مزید تفتیش کی جارہی ہے ۔دوسری جانب واقعہ پر وکلا برادری نے عدالتی کارروائی کا بائیکاٹ کرتے ہو ئے شدید احتجاج کیا اور ناقص سیکورٹی انتظامات پر پولیس کے خلاف نعرے لگائے جس کے بعد ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج امجد بوہیوجائے وقوع پر پہنچے اور صورتحال کا جائزہ لیا۔ ایس ایس پی حیدرآباد پیر محمد شاہ بھی اطلاع ملتے ہی سیشن کورٹ پہنچے اور عدالتی احاطے کو رینجرز و پولیس نے گھیرے میں لے لیا۔ ایس ایس پی حیدرآباد نے وکلا رہنماؤں اور ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کو سیکورٹی بہتر بنانے اور موجود سیکورٹی اہلکاروں کے خلاف کارروائی کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ ایس ایس پی حیدرآباد نے فوری کارروائی کرتے ہو ئے عدالت کے سیکورٹی انچار ج انسپکٹر سلمان شاہانی ، اے ایس آئی فتح محمد مجیدانو ، اے ایس آئی خلیل احمد شیدی اور پولیس اہلکار یوسف جکھرانی کو معطل کردیا ہے جبکہ اے ایس پی زاہدہ پروین کی سربراہی میں ایک تحقیقاتی کمیٹی بھی تشکیل دے دی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ