باہر جانے والے سابق سی ای او پی آ ئی اے کا نام ای سی ایل میں ہونیکا انکشاف

74

اسلام آباد(صباح نیوز) پارلیمانی سیکرٹری برائے ہوا بازی جاوید اخلاص نے قومی اسمبلی میں انکشاف کیا ہے کہ غیر قانونی طور پر پی آئی اے کا طیارہ جرمنی لے جانے والے غیر ملکی سی ای او کا نام ای سی ایل میں ہونے کے باوجود اسے باہر جانے کی اجازت دے دی گئی، اپوزیشن نے متذکرہ غیر ملکی سی ای او کے ریڈ وارنٹ جاری کرنے کا مطالبہ کر دیا ہے، پی آئی اے کے جہاز کو فلسطین کے خلاف اسرائیلی فلم میں استعمال کرنے کے لیے جرمنی لے جایا گیا تھا، اسپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے آئندہ ہفتے اس معاملے پر ایف آئی اے کی تحقیقاتی رپورٹ ایوان میں پیش کرنے کی رولنگ جاری کر دی ہے۔ انہوں نے واضح کیا ہے کہ خلاف ضابطہ اس طیارے کو بیرون ملک لے جانے کے معاملے پر درجنوں سوالات پیدا ہوئے ہیں ،پارلیمانی سیکرٹری نے اعتراض کیا ہے کہ میڈیا میں آنے پر ایف آئی اے نے پی آئی اے کے اس گمشدہ طیارے کی تحقیقات کیں۔ جمعرات کو شازیہ مری کے سوال کے جواب میں پارلیمانی سیکرٹری ہوا بازی جاوید اخلاص نے کہا ہے کہ پی آئی اے کی ائر بس 310 Aکو جرمن سی ای او کی منظوری سے لیپزنگ میوزیم جرمنی کو 47500یورو میں فروخت کیا گیا،پیپرا رولز کی خلاف ورزی کی گئی،ایف آئی اے کے علاوہ پی آئی اے میں تفتیش کی گئی متذکرہ ایگزیکٹیو آفیسر کو خلاف ورزیوں کا قصور وار قرار دے کر برطرف کر دیا گیا، حتمی تحقیقاتی رپورٹ کا انتظار ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ