اے ٹی ایم اسکینڈل کا اہم ملزم گرفتار ، سیکڑوں کارڈ برآمد

111

اسلام آباد،کراچی(صباح نیوز)وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے)نے اے ٹی ایم ا سکینڈل کی تحقیقات میں اہم ملزم کو گرفتار کر کے سیکٹروں اے ٹی ایم کارڈز برآمد کر لیے۔ایف آئی اے کے سائبر کرائم ونگ نے ایسے آلات کا بھی پتا چلا لیا جن کی مدد سے اے ٹی ایم ڈیٹا چوری کیا جاتا ہے۔انچارج سائبر کرائم ونگ راولپنڈی اسلام آباد رانا عمران سید نے بتایا کہ ایک ملزم کو گرفتار کیا گیا ہے جس سے مزید تحقیقات کی جارہی ہیں۔تفتیش کاروں کے مطابق ضرورت پڑنے پر بیرون ممالک سے بھی معاونت کے لیے رابطے کیے جا سکتے ہیں تاہم دو طرفہ معاہدے نہ ہونے سے مشکلات پیش آسکتی ہیں۔ایف آئی اے حکام کا کہنا ہے کہ بینکوں کو بھی سیکورٹی اقدامات بڑھانے چا ہییں۔سرکاری اعداد و شمار کے مطابق پچھلے سال ملک میں 4 کھرب روپے سے زائد کا لین دین اے ٹی ایم کے ذریعے ہوا۔ایف آئی اے حکام کا کہنا ہے کہ اے ٹی ایم سے متعلق فراڈ کی شکایات میں اضافہ ہو رہا ہے جس کی روک تھام کے لیے تمام اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے ہنگامی پلاننگ کی ضرورت ہے۔ایف آئی اے حکام کا مزید کہنا ہے کہ تمام بینک اپنے سسٹم کو اپ گریڈ کرکے صارفین کو ایسے اے ٹی ایم کارڈز جاری کرسکتے ہیں جن کا ڈیٹا چرایا نہ جا سکے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ