وزیر محنت کا تھل انجینئرنگ کو نوٹس

102

سید ناصر حسین شاہ لیبر منسٹر حکومت سندھ کی ہدایت پر محکمہ کے اعلیٰ حکام نے 27 نومبر کو لیٹر نمبر L-M-S-21/M/2017 چیف ایگزیکٹو آفیسر (CEO) تھل انجینئرنگ (HOH) کو بحوالہ لیبر قوانین کی مسلسل سنگین خلاف ورزیوں پر تنبیہ کرتے ہوئے جواب طلبی کی ہے اور حکم دیا ہے کہ 7 دن میں اس کی تحریری وضاحت کی جائے، ورنہ ان کی جانب سے حسب حال لیبر قوانین کی خلاف ورزیاں اور مزدروں کے تحفظ یافتہ قانونی حقوق کی پامالی کا سلسلہ ختم نہ کیا گیا تو ان کے خلاف عدالتی کارروائی کرتے ہوئے فیکٹری کو ازروئے قانون بند بھی کیا جاسکتا ہے۔ واضح رہے کہ اس تمام تر صورت حال پر صدر سندھ لیبر فیڈریشن شفیق غوری نے متعلقہ وزارت کے اعلیٰ حکام کو روبرو اور تحریری طور پر آگاہی فراہم کی ہے، جس پر یہ اقدامات اٹھائے گئے ہیں جب کہ وزیراعلیٰ سندھ کو بھی اس
کارروائی سے باخبر کیا گیا ہے۔ تھل انجینئرنگ کی انتظامیہ مسلسل ٹریڈ یونین کی آزادی کے حوالے سے آئی ایل او کے کنونشن C-87 کی سنگین خلاف ورزی کرتے ہوئے مزدوروں کی حقیقی و نمائندہ مزدور یونین کی NIRC میں رجسٹریشن کارروائی کو غیر ضروری طول دینے اور روکنے کے لیے رشوت خور افسران پر لاکھوں روپے خرچ کررہی ہے اور مزدوروں کو زبردستی جبر و تشدد کے ذریعے اپنی بنائی ہوئی پاکٹ یونین میں شمولیت اختیار کرنے پر مجبور کررہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ