اقبال کون تھے؟

112

سماجی رابطہ کمیٹی کےتحت اقبال ڈے کی مناسبت سے تقریب کا انعقاد
اقبال کون تھے ؟ اس موضوع پر الخدمت فاونڈیشن سے وابستہ سماجی رابطہ کمیٹی (جدہ) کے تحت اقبال ڈے کی تقریب میں پاکستان قونصلیٹ جنرل جدہ کے قونصلرویلفیئر نجیب اللہ نے لیکچر دیا۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر علامہ اقبال نے مسلمانوں کو ایک شناخت دی اور پاکستان کی منزل تک پہنچایا۔ وہ صرف شاعر نہیں بلکہ ایک عظیم مفکر تھے۔ علامہ اقبال ہر دور کے شاعر ہیں کیونکہ ان کی شاعری میں مستقبل، حال اور ماضی کی تمام تر کیفیات نمایاں ہیں۔ انہوں نے مسلمان قوم کو اپنی شاعری کے ذریعے ہی بیدار کیا اور انہیں اکٹھا کرکے پاکستان بنانے کا عظیم تصور دیا۔ آج بھی ان کی شاعری کو دیکھا جائے تو دورِحاضر کے چیلنجز سے بخوبی نبرآزما ہوا جا سکتا ہے۔ نجیب اللہ نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ پاکستانی برادری علامہ اقبال کے پیغام کی پیروی کریں اور مکمل اتحاد اور ہم آہنگی کے ساتھ رہیں۔
مذہبی اسکالر اور صحافی عبد الستارخان نے خطاب کرتے ہوئے مسلم امہ کے 4 اہم اجزا پر مختصر لیکچر دیا۔ انہوں نے امت کے تصور کو اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ یہ خیر امت انسانوں کے لیے اس لیے برپا کی گئی ہے کہ یہ خیر کی تعلیم دیتی ہے، نیکی کا حکم اور برائی سے روکتی ہے۔ یہ اس امت کا فرضِ منصبی ہے جسے بھلادیا گیا ہے۔ آج فکر اقبال سے امت کو اپنا فرض منصبی یاد کر نا ہوگا۔
اس موقع پرشاہ عبدالعزیز یونیورسٹی جدہ سے وابستہ ڈاکٹر محمد عبدلکریم بیبانی نے علامہ اقبال کی زندگی پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ علامہ اقبال کی شاعری ہجر یا وصال پر مبنی نہیں بلکہ ہماری روزمرہ زندگی اور اسلامی تعلیمات کے گرد گھومتی ہے۔ صدر تقریب سابق سعودی سفارتکار ،دانشور اور کالم نگار ڈاکٹر علی الغامدی کا کہنا تھا کہ انہوں نے جتنا پاکستان میں وقت گزارا، علامہ اقبال کو پڑھنے اور سمجھنے میں گزرا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں ان کی شاعری سے بے حد متاثر ہوا۔ اقبال کی شاعری روحانیت پر مبنی ہے جو انسان کو حقیقتوں سے بھی آشکار کرتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگرہم اقبال کی فکر اور پیغامات پر عمل پیرا ہوتے تو امت مسلمہ اور کشمیر سمیت تمام مسائل حل ہو جاتے۔
تقریب کے اختتام پر سماجی رابطہ کمیٹی کے صدر انجینئر الطاف حسین اعوان نے حاضرین اور مقررین کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد فکر اقبال کو عام کرنا ہے۔ تقریب کی نظامت انجینئر آصف محمود بٹ نے کی۔ تلاوت قرآن پاک کی سعادت صدارتی ایوارڈ یافتہ قاری محمد آصف نے حاصل کی جبکہ طالب علم احمد زبیر نے نعت رسول مقبولﷺ پیش کی۔ بعد ازاں کلام اقبال پیش کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ