خلافت کے احیا کیلیے عالم اسلام مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرے‘ سراج الحق

141
لاہور: امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق وزیر آباد میں جلسے سے خطاب کررہے ہیں
لاہور: امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق وزیر آباد میں جلسے سے خطاب کررہے ہیں

لاہور (نمائندہ جسارت)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹرسراج الحق نے کہاہے کہ ربیع الاول کا اصل پیغام یہ ہے کہ دنیامیں شریعت محمدی ؐ کا غلبہ ہو، خاص طور پر مسلم ممالک میں نظام مصطفےٰؐ کا مکمل نفاذ ہو اور خلافت کے احیا کے لیے عالم اسلام متحد ہوکر مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرے ۔ آپ ؐ کی حیات طیبہ قیامت تک کی انسانیت کے لیے بہترین نمونہ ہے ۔ آپ ؐ نے معیشت ، زراعت ، تجارت، سیاست اور حکومت کا بہترین نظام دیا۔ اسلامی نظام میں انسانیت کی تما م پریشانیوں کا علاج موجود ہے ۔ عشق مصطفی ؐ اور غلامی مصطفی ؐ کا تقاضا ہے کہ ملک میں نظام مصطفے ٰؐ نافذ ہو جائے ۔ جماعت اسلامی ملک میں نظام مصطفے ٰؐ کے نفاذ کی جدوجہد کر رہی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامع مسجد منصورہ میں نماز جمعہ کے بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ سینیٹرسراج الحق نے کہاکہ کلمے کی بنیاد پر بننے والے ملک میں 70سال سے اللہ کے باغی اور سیکولر قوتوں کے غلام حکمران اقتدار پر قابض ہیں جو ملک و ملت کو اسلام سے دور کر رہے ہیں ۔ ملک میں اسلامی قوانین کے بجائے مغرب ویورپ کے قوانین نافذ ہیں اور یہاں عریاں اور فحش تہذیب کو مسلط کیا جارہاہے ۔ انہوں نے کہاکہ جب دین غالب ہو جائے تو معاشرے سے ظلم و جبر ، بے حیائی، سودی معیشت اور خواتین کے حقوق کی پامالی جیسے واقعات کا خود بخود خاتمہ ہوجائے گا۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پاکستان پر مسلط اشرافیہ اسلام کو اپنے لیے سب سے بڑا خطرہ سمجھتی ہے حالانکہ اسلام انسانیت کے لیے رحمت اور باطل نظام دنیا کے لیے سراسر تباہی او ر بربادی ہے ۔ اسلام مردوں کی بے حرمتی سے روکتاہے اور جنگ میں بھی درختوں اور فصلوں کو جلانے سے منع کرتاہے جبکہ باطل زندہ انسانوں کو جلانے سے بھی بازنہیں آتا۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں موجود مغرب کے ذہنی غلام روسی اور امریکی فوجوں کی اسلامی ملک پر چڑھائی پر تالیاں بجاتے ہوئے ان کا استقبال کرتے ہیں ،یہی لوگ ملک میں اسلامی تہذیب و تمدن کے راستے میں سب سے بڑی رکاوٹ ہیں ۔سراج الحق نے 25نومبر عالمی یوم تحفظ خواتین کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ اسلام عورت کو ماں بہن اور بیٹی کے مقدس رشتوں کی حیثیت سے احترام اور عزت و وقار کا مرتبہ دیتاہے جبکہ مغرب نے عورت کو بازار کی زینت بنا کر اس کا استحصال کیا ہے ۔ معمولی اشیا کی فروخت کے لیے بھی عورت کو اشتہار کے طور پر استعمال کیا جاتاہے اور مغرب میں شدید سردی میں بھی دفاتر اور فیکٹریوں میں کام کرنے والی خواتین مختصر لباس پہننے پر مجبور ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اسلام خواتین کے حقوق کا سب سے بڑا علمبردار اور محافظ ہے جس نے عورت کو باپ اور خاوند کی جائداد میں باقاعدہ حصہ دار بنایا ہے ۔
****
گوجرانوالہ ( نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ ہم نے کرپشن کے خلاف جو جدوجہد شروع کی ہے وہ کامیاب ہو کر رہے گی۔ ہم لوٹ کھسوٹ کے اس نظام سے بغاوت کا اعلان کرتے ہیں ۔ اب یہ نظام رہے گا یا ہم رہیں گے ۔ اب اسٹیٹس کو اور امریکی آلہ کاروں کے استحصالی نظام کو عوام ایک دن کے لیے برداشت کرنے کو تیار نہیں ۔ 70سال سے اقتدار پر قابض ظالم اشرافیہ نے اقتدار پر قبضہ کر رکھاہے جس میں سے 35 سال یہا ں مارشل لا رہا اور ڈکٹیٹروں نے قبضہ کیے رکھا ۔نام نہاد سول حکمرانوں اور فوجی ڈکٹیٹروں کو امریکی سامراج او ر عالمی اسٹیبلشمنٹ کی سرپرستی حاصل رہی ۔ امریکا نے اسلامی ملکوں میں اپنے کئی کئی گھوڑے پال رکھے ہیں ایک ناکام ہوتاہے تو وہ دوسرے کو آگے کر دیتا ہے۔ نوازشریف کو عدالت عظمیٰ نے کرپشن پر نااہل کیا مگر وہ ابھی تک پوچھتے پھرتے ہیں کہ مجھے کیوں نکالا اور کہتے ہیں مجھے دوبارہ اختیارات دیں۔ گجرات ، سیالکوٹ اور منڈی بہاؤ الدین کے نوجوانوں کے بلوچستان میں قتل کے اصل مجرم حکمران ہیں جو نوجوانوں کو بے روزگاری کی چکی میں پیس رہے ہیں ۔ پنجاب اور مرکز میں 3 عشروں سے شریف خاندان حکومت میں ہے شہبازشریف بتائیں کہ انہوں نے بے روزگار ی کے خاتمے کے لیے کیا کیاہے ؟ جماعت اسلامی آئندہ الیکشن میں 50 فیصد ٹکٹیں نوجوانوں کودے گی۔جماعت اسلامی پاکستان کے مرکز منصورہ لاہور سے جاری اعلامیے کے مطابق ان خیالات کا اظہار انہوں نے کالج گراؤنڈ وزیرآباد میں یوتھ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ کنونشن سے صدر جے آئی یوتھ زبیر احمد گوندل ، بلال قدرت بٹ اور مشتاق احمد بٹ نے بھی خطاب کیا ۔ یوتھ کنونشن میں ہزاروں لوگوں نے شرکت کی جن میں بہت بڑی تعداد نوجوانوں کی تھی۔ سینیٹر سرا ج الحق نے کہاکہ بے حس اور نااہل حکمرانوں کی وجہ سے ملک گمبھیر مسائل کا شکار ہے حکمران ان مسائل سے نمٹنے کی صلاحیت رکھتے ہیں نہ ان کا کوئی وژن ہے ۔ حکمرانوں میں اپنی ذات سے آگے دیکھنے کی اہلیت نہیں ان کا بس ایک ہی نظریہ ہے کہ لوٹو اور پھوٹولیکن اب قوم انہیں بھاگنے نہیں دے گی ۔ ہم نے عدالت عظمیٰ سے درخواست کی ہے کہ پاناما لیکس کے دیگر 436 کرداروں اور بینکوں کو لوٹ کر دولت بیرون ملک منتقل کرنے والوں کا محاسبہ کیا جائے ۔ ہماری اس درخواست کی سماعت شروع ہوگئی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ بددیانت اور کرپٹ لوگوں کو سرپر مسلط کرنے والوں کو اپنے رویے کو بدلناہوگا ۔ جن سانپوں اور بچھوؤں کو دودھ پلا کر اور قیمتی ووٹ دے کر وہ اقتدار کے ایوانوں میں پہنچاتے رہے ہیں وہی ملک میں بدترین غربت ، مہنگائی، کرپشن ، جہالت ، بدامنی اور دہشت گردی کے مجرم ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ملک میں 2 کروڑ سے زائد بچے تعلیم سے محروم ہیں ۔70 لاکھ نوجوان بے روزگار ہیں 89 فیصد لوگوں کو پینے کا صاف پانی دستیاب نہیں ۔ اعلیٰ ڈگریوں والے نوجوانوں کو روزگار نہیں ملتا اور حکمرانوں کے نکھٹو اور نکمے بیٹے اعلیٰ منصبوں پر فائز ہیں جس سے ملک کا مستقبل تاریکیوں میں ڈوب رہاہے اگر ملک میں قانون اور میرٹ کی بالادستی ہوتی تو ان لوگوں کو کسی ادارے میں چپڑاسی کی نوکری بھی نہ مل سکتی ۔ انہوں نے کہاکہ میں نوجوانوں کو نصیحت کرتاہوں کہ وہ مایوسی سے نکلیں اور اللہ کے دین کی رسی کو تھام لیں اور حضور ؐ کے سچے امتی بن کر ملک میں نظام مصطفےٰ ؐ کے نفاذ کی جدوجہد میں شریک ہو جائیں ۔ موجودہ بحرانوں سے نجات کے لیے قرآن کریم کے نظام کی ضرورت ہے ۔ سیکولر اور لبرل ازم کے پیروکار اور غلامان امریکا ملک و قوم کو مسائل کی دلدل میں دھکیل چکے ہیں اب اسلام کے پیروکار اور غلامان مصطفےٰؐ قوم کو ان مسائل سے نجات دلائیں گے ۔ قوم کو اپنے نوجوانوں کی صلاحیتوں پر اعتماد ہے ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ کشمیر پاکستان کا بنیادی مسئلہ ہے ۔ بھارت پانی بند کر کے پاکستان کے خلاف آبی دہشت گردی کررہا ہے جس سے پنجاب سمیت پورا ملک بنجر اور ویران ہو نے کا خطرہ ہے ۔ پاکستان کے خلاف بھارت کے ناپاک عزائم کی راہ میں کشمیری مجاہدین سب سے بڑی رکاوٹ ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ہمارے حکمران کشمیری بھائیوں کی مدد کرنے کے بجائے مودی سے دوستی نبھا رہے ہیں ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ بنگلا دیش میں جماعت اسلامی کے مزید 6 رہنماؤں کو پھانسی کی سزا سنا دی گئی ہے ۔ پاکستان کو ان کا مقدمہ عالمی سطح پر لڑنا چاہیے اور اس ظلم و جبر کو روکنا چاہیے ۔