پشاورمیں خود کش حملہ، ایڈیشنل آئی جی ہیڈکوارٹر محمد اشرف نورشہید

127

پشاور کے علاقے حیات آباد میں خود کش حملے کے نتیجے میں ایڈیشنل آئی جی ہیڈکوارٹر محمد اشرف نور اور ان کا ایک محافظ شہید جبکہ 4اہلکار زخمی ہوگئے۔

 پولیس کے مطابق ایڈیشنل آئی جی اشرف نور گھر سے آفس جارہے تھے کہ تاتارا پارک کے قریب خودکش حملہ آور نے ان کی گاڑی کو نشانہ بنایا۔سی سی پی او طاہر خان کے مطابق خودکش حملہ آور موٹرسائیکل پر سوار تھا اور اس نے اپنی موٹرسائیکل ایڈیشنل آئی جی اشرف نور کی گاڑی سے ٹکرائی جس کے نتیجے میں گاڑی میں آگ لگ گئی۔دھماکے کے نتیجے میں ایڈیشنل آئی جی اشرف نور اور ان کا ایک محافظ موقع پر ہی شہید ہوگئے جب کہ ان کی گاڑی مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔

سی سی پی او طاہر خان نے کہا ہے کہ اشرف نور کے لئے کوئی مخصوص تھریٹ نہیں تھا۔دھماکے کی زد میں آنے والی پولیس کی دوسری گاڑی کو بھی نقصان پہنچا جبکہ حیات آباد میڈیکل کمپلیکس میں 4 زخمی اہلکاروں کو منتقل کیے جانے کی اطلاعات ہیں۔شہید ایڈیشنل آئی جی کے زخمی ڈرائیور ذیشان کے مطابق ہم دفتر جارہے تھے کہ راستے میں کھڑی موٹر سائیکل میں دھماکا ہوا، گاڑی کی اگلی نشست پر اے آئی جی صاحب کا محافظ اور پچھلی نشست پر وہ خود بیٹھے تھے ۔دھماکے کے بعد پولیس کی بھاری نفری نے موقع پر پہنچ کر علاقے کو گھیرے میں لے لیا جب کہ بم ڈسپوزل اسکواڈ نے جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کرنا شروع کردیے۔

واضح رہے شہید ایڈیشنل آئی جی ہیڈ کوارٹر محمد اشرف نور کا تعلق گلگت بلتستان سے تھا، انہوں نے ایم ایس سی ایگرکلچر کی ڈگری حاصل کی اور 1989میں سول سروسز جوائن کی۔شہید محمد اشرف نور کی پہلی تعیناتی کہوٹہ میں بطور ایس ڈی پی او ہوئی اور وہ ایس پی ٹریفک، ایس پی ہیڈ کوارٹر ایبٹ آباد، جی ڈی پی او چترال اور ڈی پی او کوہستان کے عہدوں پر بھی فائز رہے۔

حصہ