فاٹا کو پختونخوا میں ضم کیا جائے‘عمران خان کی عدالت عظمیٰ میں درخواست

57

اسلام آباد(آن لائن)شریفوں کے احتساب کے بعد قبائلی عوام کے حقوق اور مستقبل کے معاملے پر وفاقی حکومت کی عدم دلچسپی کے باعث چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے عدالت عظمیٰ سے رجوع کرلیا ہے ۔فاٹا کے پختونخوا میں انضمام کے لیے عمران خان کی جانب سے عدالت عظمیٰ میں آئینی درخواست داخل کر دی گئی ہے۔سینئر رہنما اور ماہر قانون ڈاکٹر بابر اعوان نے عمران خان کی ایما پر درخواست جمع کرائی ۔درخواست میں صدرمملکت, وفاقی حکومت اور فاٹا کے انچارج کو فریق بنایا گیا ہے جبکہ درخواست آئین کے آرٹیکل 184(3) کے تحت دائر کی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق آئینی درخواست میں فاٹا کے پختونخوا میں انضمام کے لیے عدالتی حکم نامے کے اجرا کی استدعا کی گئی ہے ۔درخواست میں کہا گیا ہے کہ آئین پاکستان فاٹا سمیت تمام علاقوں کے شہریوں کو جمہوریت، آزادی، مساوات، سماجی انصاف سمیت تمام حقوق کی ضمانت دیتا ہے۔آئین کا آرٹیکل 247 صدرمملکت کو پابند بناتا ہے کہ وہ فاٹا کے عوام کا معیارزندگی ملک کے دیگر حصوں کی طرح بلند کرنے کے لیے اقدامات اٹھائیں اورعدالت عظمیٰ معاملے سے جڑے حقائق کی روشنی میں فاٹا کے پختونخوا میں انضمام کے احکامات صادر کرے۔دریں اثنا تحریک انصاف کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھاکہ سینیٹر اسحق ڈار کو فرار کے بجائے قانون کا سامنا کرنا چاہیے، قوم ماڈل ٹاؤن اور حدیبیہ کیس کے منطقی انجام کی منتظر ہے۔