سندھ حکومت نے محکمہ پولیس کے 90 فیصد فنڈز روک لیے

68

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ حکومت نے آئی جی سندھ کو ایک بار پھر پریشان کرتے ہوئے محکمہ پولیس کے 90 فیصد فنڈز روک لیے جبکہ محکمہ پولیس میں بھی آئی جی سندھ کے جانے کے حوالے سے چہ مگوئیاں شروع ہوگئی ہیں۔ ذرائع کے مطابق حکومت سندھ نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو ناکام بنانے کے لیے 90 فیصد فنڈز روک لیے ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ فنڈزجاری نہ ہونے کے باعث سندھ پولیس میں کئی اہم کام متاثر ہوئے ہیں جبکہ کئی ترقیاتی کام بھی رک گئے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ فنڈ نہ ہونے کے باعث لاجسٹک کا شعبہ سب سے زیادہ متاثر ہورہا ہے جبکہ کئی مقامات پر رہائشی کالونیز (پولیس لائن)، افسران کے دفاتر و بنگلوں کی مرمت و تزئین و آرائش بھی شدید متاثر ہورہی ہے،مرمت کے کام روک دیے گئے ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ جو تھوڑے بہت فنڈز ہیں ان سے روزمرہ کے امور نمٹائے جارہے ہیں، اگر جلد ہی فنڈز ریلیز نہ کیے گئے اور صورتحال یہی رہی تو آئندہ کچھ ہی عرصے میں سندھ پولیس فنڈ کی شدید قلت کا شکار ہو جائے گی اور روز مرہ کے امور نمٹانا بھی انتہائی دشوار ہوجائے گا۔ذرائع نے بتایا کہ سندھ حکومت نے آئی جی سندھ کو ناکام بنانے کے لیے اس طرح کا رویہ اختیار کیا ہے تاکہ آئی جی سندھ مجبوراًاپنا عہدہ چھوڑ دیں۔

حصہ