اہم خبریں

79

پاکستان میں جانوروں کے بھی شناختی کارڈ بنانے کا فیصلہ

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاکستان میں جانوروں کے بھی شناختی کارڈ بنانے کا فیصلہ ،نادرا کی طرز کا ادارہ بنایا جائے گا جس کے ذریعے جانوروں کو ویزا اور پاسپورٹ بھی دیا جائے گا۔پاکستان میں انسانوں کے بعد اب جانوروں کے بھی شناختی کارڈ بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ذارئع کے مطابق پاکستان کی انتظامی تاریخ کا منفرد قانون بنانے کی تیاری جاری ہے۔ جانوروں کے لیے بھی نادرا کی طرز کا ادارہ بنایا جائے گا جس کے ذریعے انہیں شناختی کارڈ، ویزا اور پاسپورٹ بھی دیے جائیں گے۔سندھ حکومت کے محکمہ لائیو اسٹاک نے انوکھا بل تیار کیا ہے جس کے تحت سندھ لائیو اسٹاک رجسٹریشن اتھارٹی کا قیام عمل میں لایا جائے گا۔ جانوروں کا سینٹرل ڈیٹا بیس بنایا جائے گا، ان کی نقل و حرکت اور پیدائش و انتقال کے بارے میں لائیو اسٹاک اتھارٹی کو آگاہ کرنا ہوگا اور دستاویز لینا ہوگی، کمپیوٹرائزڈ ڈیٹا بیس میں جانوروں کی پیدائش و اموات کا اندراج ہوگا۔ہر جانور کو مخصوص شناختی کوڈ جاری کیا جائے گا اور انہیں ذبح خانوں میں لانے پر اتھارٹی کو اطلاع دینا لازمی ہوگی۔ لائیو اسٹاک اتھارٹی جانوروں کی ویلفیئر اور نیوٹریشن پر کام کرے گی جبکہ قصابوں کی تربیت اور ان کی رجسٹریشن ہوگی۔

نواز شریف کیخلاف بل مسترد کرانے کیلیے وزیراعظم کا لیگی ارکان کو ظہرانہ

اسلام آباد (آن لائن/ اے پی پی) سابق وزیراعظم نواز شریف کو نااہلی سے بچانے کے لیے اپوزیشن کے اسمبلی میں بل کی مخالفت کے حوالے سے مسلم لیگ(ن) کی بھاری اکثریت حاضر رکھنے کے پیش نظر وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ن لیگی اراکین کو ظہرانہ دے دیا، 188 اراکین میں سے 128 نے شرکت کی جن میں سابق وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار اور حمزہ شہباز سمیت اہم رہنماؤں نے شرکت نہیں کی۔ تفصیلات کے مطابق منگل کے روز وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے سابق وزیراعظم نواز شریف کی مخالفت میں پیش ہونے والے اپوزیشن کے بل کے مقابلے میں مسلم لیگ(ن) کے اراکین کی تعداد بڑھانے کیلیے پارلیمنٹ ہاؤس میں ظہرانہ دے دیا تاکہ 60 سے 70 مسلم لیگ(ن) کے اراکین اسمبلی جو کہ ایوان سے مسلسل غیر حاضر ہیں وہ آسکیں۔ ظہرانے میں بریانی، بیف، مرغ مسلم، شاہی کباب، مچھلی، کشمیری حلوہ، رشین سلاد اور مختلف کھانے پیش کیے گئے۔ دوسری جانب مسلم لیگ(ن) کے بیشتر ارکان ناراض دکھائی دیے کہ ’’حاضری کو یقینی بنانے کے لیے ظہرانے کا اہتمام کیا گیا‘‘ کیونکہ ن لیگی اراکین کی ایوان میں عدم شرکت کے باعث ہر وقت فورم کا مسئلہ بنتا ہے۔ دوسری جانب ترجمان قومی اسمبلی نے میڈیا پر چلنے والی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ بعض ٹی وی چینل نے اسپیکر ایاز صادق کی جانب سے قومی اسمبلی اراکین کو ظہرانہ دینے کی خبر نشر کی جو کہ غلط ہے۔ ظہرانے کا مقصد اتحادی جماعتوں کی شرکت کو یقینی بنانا ہے اور یہ ظہرانہ اسپیکر ایاز صادق کی جانب سے نہیں بلکہ وزیراعظم کی جانب سے دیا جا رہا ہے۔ علاوہ ازیں ن لیگ کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس منگل کو وزیراعظم شاہد خاقان کی صدارت میں پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوا، جس میں چودھری نثار اور رانا تنویر سمیت 150 سے زائد اراکین نے شرکت کی۔ اجلاس میں قومی اسمبلی کے اجلاس کے ایجنڈے پر غور کیا گیا اور حکمت عملی ترتیب دی گئی۔

نواز شریف ، مریم اور کیپٹن صفدر کے خلاف نیب ریفرنسز کی سماعت آج ہو گی

اسلام آباد (آئی این پی)احتساب عدالت میں سابق وزیر اعظم نواز شریف ، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کے خلاف نیب ریفرنسز کی سماعت آج کو ہو گی ، سابق وزیر اعظم اور ان کی صاحبزادی مریم نواز نے عدالت حاضری سے استثنا حاصل کر رکھا ہے۔نواز شریف کے وکیل خواجہ حارث ایڈووکیٹ گواہوں پر جراح کریں گے ۔ مریم نواز اور کیپٹن صفدر کے خلاف لندن فلیٹس ریفرنسز کی سماعت ہو گی اور اس کیس میں بھی استغاثہ کے گواہ اپنے بیانات ریکارڈ کرائیں گے اور دستاویزات عدالت میں جمع کرائیں گے ۔ کیس کی سماعت کے موقع پر جوڈیشل کمپلیکس کی سیکورٹی کو انتہائی سخت کر دیا جائے گا ۔ پولیس کی معاونت کے لیے ایف سی کے دستے تعینات ہوں گے۔

حکومت کا اپوزیشن کا ترمیمی بل سینیٹ سے منظور نہ کرانے کا فیصلہ

اسلام آباد(آئی این پی ) قومی اسمبلی کی طرف سے نااہل شخص کو پارٹی کا سربراہ بنانے سے متعلق سینیٹ سے منظور کردہ انتخابات ترمیمی بل2017 ء کثرت رائے سے مسترد ہونے کے باوجود معاملہ ابھی ختم نہیں ہوا ، بل پر اپوزیشن کے پاس پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانے کا آپشن موجود ہے جہاں ووٹنگ کے ذریعے حتمی فیصلہ کیا جاسکتا ہے۔ آئینی ماہرین کے مطابق سینیٹ کی طرف سے منظور کردہ انتخابات ترمیمی بل2017 ء قومی اسمبلی میں کثرت رائے سے مسترد ہوتو گیا ہے لیکن معاملہ ابھی ختم نہیں ہوا ۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر پارلیمنٹ کا ایک ایوان بل کو پاس کردے تو وہ بل دوسرے ایوان میں جا کر مسترد ہو جائے تو اس کا فیصلہ مشترکہ اجلاس میں ہوتا ہے ۔ انتخابات ترمیمی بل2017 ء کو سینیٹ نے منظور کیا تھا اب قومی اسمبلی نے اسے مسترد کردیا ہے اس لیے اب اپوزیشن کے پاس یہ آپشن موجود ہے کہ وہ اس بل پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلانے کا مطالبہ کرسکتی ہے اور مشترکہ اجلاس میں بل پر ووٹنگ ہوگی جس کے پاس اکثریت ہوگی اسے بل کو منظور اور مسترد کرنے کا اختیار حاصل ہوگا۔

وزیراعلیٰ پنجاب کی اسموگ سے نمٹنے کے لیے بھارتی ہم منصب کو دعوت

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے بھارتی پنجاب کے وزیر اعلیٰ کیپٹن (ر) امریندر سنگھ کے نام خط میں بھارتی ہم منصب کو دعوت دی ہے کہ اسموگ اور ماحولیاتی آلودگی کے مسائل سے نبردآزما ہونے کے لیے علاقائی تعاون کے اقدامات کیے جائیں اور اس ضمن میں دونوں پنجاب کے عوام کے خوشحال مستقبل کے لیے مل کر کام کریں۔شہباز شریف کی جانب سے بھارتی پنجاب کے وزیراعلیٰ کیپٹن (ر) امریندر سنگھ کو 19 نومبر کو لکھے گئے خط میں اسموگ اور ماحولیاتی مسائل پر علاقائی تعاون کی دعوت دیتے ہوئے تحریر کیا ہے کہ گزشتہ برس پاکستانی اوربھارتی پنجاب کو اسموگ کے مسلے کاسامنا کرنا پڑا تاہم رواں سال یہ مسئلہ زیادہ شدت اختیار کر گیا اوراس کاپھیلاؤ بھی زیادہ رہا۔شہباز شریف کا کہنا تھا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ اسموگ سے عوام کی صحت بالخصوص بزرگوں اور بچوں پر برے اثرات پڑتے ہیں جبکہ فصلوں کی کاشت میں بھی تاخیر ہوتی ہے، اسی طرح گندم کی تاخیر سے بوائی اور آلو اور دیگر فصلوں کو پہنچنے والے نقصانات کی بنا پر زراعت متاثر ہوتی ہے.وزیراعلیٰ پنجاب نے خط میں کہا ہے کہ اسموگ کے باعث نہ صرف فصلیں بلکہ ٹریفک حادثات میں بھی اضافہ ہوتا ہے اور کئی قیمتیں جانیں بھی ضائع ہوجاتی ہیں۔اپنے خط میں انھوں نے لکھا ہے کہ اسموگ کی بڑی وجوہات میں گاڑیوں اور صنعتی آلودگی سمیت چاولوں کی باقیات کے جلاؤ کے ذریعے تلفی شامل ہے ، اوراب اِس مسئلے نے علاقائی صورت اختیار کر لی ہے جس سے نئی دہلی تا لاہور اور دیگر علاقے متاثر ہوئے ہیں۔پنجاب میں ہونے والے دھند اور اسموگ کو سائنسی مسئلہ قرار دیتے ہوئے انھوں نے کہا ہے کہ یہ مسئلہ بنیادی طور پر سائنسی اور معاشی نوعیت کا ہے جس سے کسی دوسرے طریقے سے نمٹا نہیں جا سکتا۔

اسلام آ باد ہائی کورٹ بار کودھرنے والوں کو منانے کا ٹاسک

اسلام آباد(آن لائن) تحریک لبیک کا دھرنا ختم کرانے کے معاملے پر جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے اسلام آباد ہائی کورٹ بار کی کابینہ کو دھرنے والوں سے بات کرکے انہیں منانے کا ٹاسک دے دیا۔ تفصیلات کے مطابق جڑواں شہروں کے سنگم میں فیض آباد کے مقام پر عدالت عالیہ کے واضع احکامات کے باوجود جاری دھرنے کے قائدین سے ملاقات کے لیے اسلام آباد ہائی کورٹ کے فاضل جج نے یہ کہتے ہوئے بار کابینہ کو منگل کوطلب کر لیا کہ آپ کو اہم ٹاسک دینا ہے جس پرسیکرٹری ہائی کورٹ بار ارباب عالم عباسی ایڈووکیٹ، جوائنٹ سیکرٹری آصف تمبولی ایڈووکیٹ سمیت دیگر عہدیدارپیش ہوئے اور فاضل جج نے بار کے وفد کو ہدایت دی کہ ہائی کورٹ بار دھرنے والوں کو عدالتی فیصلے سے آگاہ کرے اور بتائے کہ عاشقان مصطفی بلند عالی مرتبت لوگ ہیں، شاید ملک آپ کی کوشش سے افراتفری سے بچ سکے اور خادم حسین رضوی صاحب کو بتائے کہ راجا ظفر الحق کمیٹی رپورٹ عدالت نے طلب کر رکھی ہے ، ختم نبوت کے حوالے سے وہ کچھ کر رہے ہیں جو شاید ان کو پتا نہیں،ہم جو حالات دیکھ رہے ہیں اس میں صورتحال کچھ اور ہے۔جس کے بعد اسلام آباد ہائی کورٹ بار کابینہ نے تحریک لبیک کے قائدین سے ملاقات کے لیے رابطے شروع کر دیے ہیں ۔

حصہ