یورپی یونین نے امریکا سے جان چھڑانے کی ٹھان لی

81
برسلز: یورپی یونین کے وزرائے دفاع نئے عسکری معاہدے کو حتمی شکل دینے کے لیے مشاورت کررہے ہیں
برسلز: یورپی یونین کے وزرائے دفاع نئے عسکری معاہدے کو حتمی شکل دینے کے لیے مشاورت کررہے ہیں

برسلز (انٹرنیشنل ڈیسک) فرانس اور جرمنی سمیت یورپی یونین کی تئیس ریاستوں نے پیر کے روز ایک دفاعی معاہدے کو حتمی شکل دیتے ہوئے یورپی دفاعی یونین کی بنیاد رکھ دی۔ خبررساں اداروں کے مطابق برطانیہ کے یورپی یونین سے آیندہ اخراج کے بعد یونین عسکری سطح پر زیادہ خود مختار بننے کی خواہش مند ہے اور یہ معاہدہ اسی مقصد کے تحت طے کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ یورپی یونین مسلح تنازعات کے حل کے لیے امریکی عسکری مدد پر اپنا انحصار بھی کم کرنا چاہتی ہے۔ اس سمجھوتے کے تحت یورپی سطح پر ایک کرائسس رسپانس سینٹر اور یورپی میڈیکل کمانڈ سینٹر قائم کرنے کے علاوہ مشترکہ فوجی تربیتی پروگرام بھی تشکیل دیے جائیں گے۔ یونین کی رکن دیگر ریاستوں میں سے ڈنمارک نے اس معاہدے کا حصہ نہ بننے کا فیصلہ کیا ہے جب کہ پولینڈ، آئرلینڈ اور مالٹا نے تاحال اس میں اپنی شمولیت کا فیصلہ نہیں کیا۔ اس معاہدے پر یورپی ممالک کے سربراہان اگلے ماہ دستخط کریں گے۔ ماضی میں امریکی پشت پناہی پر مغربی دفاعی اتحاد نیٹو اس علاقائی منصوبے کی راہ میں رکاوٹ بنتا رہا ہے، تاہم اب یورپی رہنماؤں نے ہمت کرکے اسے حتمی شکل دے دی ہے۔

حصہ