وزیراعظم کے ایما پر او جی ڈی سی ایل میں 800لیگیوں کی بھرتیوں کا انکشاف‘ شاہد خاقان کا باورچی گرفتار

97

اسلام آباد (آن لائن) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے ایما پر 800 لیگی کارکنوں کو سیاسی بنیادوں پر آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ لمٹیڈ ( او جی ڈی سی ایل ) میں ورک چارج دیے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ اس حوالے سے ایف آئی اے نے تحقیقات شروع کر دی ہے اور وزیر اعظم کے باورچی کرامت علی کو گرفتار کر لیا گیا ہے ۔ معتبر ذرائع کے مطابق ایم این اے ‘ ایم پی ایز کی سفارش پر بھرتی کیے گئے سیکڑوں کارکنان سے بھاری نظرانے بھی وصول کیے گئے ہیں ، سیاسی بنیادوں پر ورک چارج حاصل کرنے والے افراد کو مستقل کرنے کی بھی یقین دہانی کرائی گئی ہے جو ادارے پر اضافی بوجھ کے مترادف ہے کیونکہ اس سے قبل بھی پاکستان پیپلزپارٹی کے دور میں بھرتی کیے جانے والے سیکڑوں ملازمین مستقلی کے منتظر ہیں۔ اس حوالے سے ذرائع کا مزید کہنا تھا کہ 800 افراد کو ورک چارج جاری کیے جانے میں وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی جن کے پاس وزارت پیٹرولیم کا بھی اضافی چارج بھی ہے کا عملہ ملوث ہے اور اس سے فی کس ملازم سے مبینہ طور پر 5 لاکھ روپے وصول کیے گئے ہیں۔وزیراعظم ہاؤس کے باورچی کرامت علی پر الزام ہے کہ اس نے نوکری کا جھانسہ دے کر لوگوں سے لاکھوں روپے بٹورے۔ ذرائع کے مطابق کرامت علی نے اپنے ایک ساتھی ممتاز علی کے ساتھ مل کر اوجی ڈی سی ایل کے جعلی بھرتی کے لیٹر بنائے اور سادہ لوح شہریوں سے جعلی بھرتی لیٹر کے ذریعے لاکھوں روپے بٹورے۔ کرامت علی سے مزید انکشافات کی توقع کی جا رہی ہے۔او جی ڈی سی ایل میں خلاف ضابطہ اور سیاسی بنیادوں پر بھرتیوں سے متعلق استفسار پر ترجمان او جی ڈی سی ایل احمد حیات لک نے بتایا کہ 800 افراد کو ورک چارج جاری کرنے کا علم نہیں ، چیک کر بتایا جا سکتا ہے ۔

حصہ