بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں مزید اضافہ

23

یوسی 29 کے علاقے غوث نگر میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں اضافے نے عوام کی زندگی بے حال کردی ہے۔ لوڈ شیڈنگ کے ساتھ اوور اور ایوریج بلنگ سے علاقہ مکین تنگ آچکے ہیں۔ علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ لوڈ شیڈنگ غیر اعلانیہ ہے، اسی طرح لوڈ شیڈنگ کا کوئی خاص دورانیہ نہیں ہے۔ یہاں تک عید اور محرم کے دنوں بھی لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری رہتاہے۔ گزشتہ عید پر بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کی وجہ سے عید کی تیاریوں میں کافی مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور ناقص بجلی کے تاروں کی وجہ سے وولٹیج پورے نہیں ہوتے جس کی وجہ سے علاقہ مکین کئی الیکٹرانک اشیا سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔علاقہ مکین دانش ندیم کا کہنا تھا کہ کے الیکٹرک کی ہائی وولٹیج جس کو زمین کے اندر سے گزاراگیا ہے ، لیکن راستے میں برستی نالے کی وجہ سے ایسی کیبل کو شمین کی اوپری سطح پر لوہے کے پائپ ڈال کر گزاراگیاہے۔ حالیہ بارشوں میں جب اس جگہ پانی جمع ہوا تو علاقہ مکینوں کو کرنٹ کی صورت میں جھٹکے محسوس ہوئے ہیں جس کے لیے کے الیکٹرک کو شکایات درج کروائی گئی تھی پر 60 دن گزرنے کے بعد بھی اس شکایت پر کوئی عملدرآمد نہیں ہو سکا علاقے میں سے گزرنے والی کے الیکٹرک کی گاڑیوں کو اور عملے کو روک کر متعلقہ جگہ کی بار بار نشان دہی کروائی جا چکی ہے پر وہ کہتے ہیں کہ پہلے شکایت درج کروائیں جب ہمیں آرڈر ہوگا تب کام کریں گے۔ اسی طرح اقبال روڈ کی PMT بھی پرائیوٹ الیکٹریشن کاکام کرنے والوں کی جاگیر بنی ہوئی ہے۔علاقہ مکین شکایت درج کرواتے ہیں پر کے الیکٹر کی جانب سے بروقت کام نہ ہونے کی وجہ سے لوگ پرائیوٹ طورپر کام کرواتے ہیں جس کی وجہ سے بجلی کی تاروں کا نظام درہم برہم ہے۔ آئے دن تاروں میں دھماکے ہوتے رہتے ہیں اور زمین پر گر کر پڑے رہتے ہیں جو کسی سانحہ کا باعث بن سکتاہے۔

حصہ