سرکاری اسکولوں کی حالت زار

21

یوسی میں سرکاری اسکولوں کی حالت زار انتہائی خستہ ہے نہ ہی بچوں کے لیے پانی کی سہولیات ہے اور نہ ہی بیت الخلا کا کوئی نظام ہے تمام تر کلاسوں کا فرنیچربھی ناقابل استعمال ہوچکا ہے۔یوسی کے علاقے کھچی محلے اور غوث نگر کے مکینوں کا کہنا تھا کہ ہمارے علاقے میں سرکاری طور پر پرائمری اسکول موجودہے پر اس میں 3 کمرے ہیں اور اسکول میں طلبہ کی گنجائش بھی کم ہے دوسری جانب اسکول کی عمارت ایسی نہیں کہ جس میں بچوں کو پڑھنے کے لیے بھیجاجا سکے کلاسوں کی چھت سیمنٹ کی چادروں سے ڈھکی ہوئی ہے۔ چادریں انتہائی خستہ حالت میں ہیں ۔ علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ ہم متعلقہ اداروں سے مطالبہ کرتے ہیں کے غوث نگر میں سرکاری طور پر سیکنڈری اور پرائمری اسکولزکی از سر نو تعمیر کی جا ئے تاکہ ہم اپنے بچوں کو تعلیم دیں سکیں۔

حصہ