بلاول زرداری کا چار مطالبات کے لئے سیاسی لانگ مارچ کا اعلان

165

پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ مرا نہیں کرتے ان کی سوچ ، فکر ، کارنامے زندہ رہے ہیں ، کچھ لوگ ہمیں ماضی پرست کہتے ہیں ، بےنظیر بھٹو کبھی ضیاء اور کبھی ضیاء کی باقیات کے خلاف لڑیں ، عدلیہ نے ہمارے ساتھ کبھی انصاف نہیں کیا ، کیا سارے سوموٹو ایکشن ہمارے لئے رہ گئے ہیں ، ن لیگ کو میری باتیں دیر سے سمجھ آتی ہیں ، چار مطالبات کی منظوری کے لئے سارے ملک کا دورہ کروں گا ، پاکستان میں لوگ پوچھتے ہیں کہ وزیراعظم کا نام کیا ہے توکہا جاتا ہے پاناماشریف ، وزیراعظم نے اپنی کابینہ میں دہشتگردوں کے سہولت کار رکھے ہوئے ہیں، سپریم کورٹ کےکوئٹہ کمیشن کی رپورٹ میں میری باتیں ثابت ہوگئیں،وزیرداخلہ استعفا دینےکے بجائے سپریم کورٹ سمیت سب کودھمکیاں دےرہےہیں۔

گڑھی خدا بخش میں سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کی 9 برسی کے موقعے پر چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ کچھ لوگ مرا نہیں کرتے انکی سوچ ،فکر ،کارنامے زندہ رہتے ہیں ، ذو الفقار علی بھٹو تاریخ اورلوگوں کے دلوں میں زندہ ہیں ، کچھ لوگ زندہ رہ کر بھی مردہ لاشوں کی طرح ہوتے ہیں ، گڑھی خدابخش:کچھ لوگ ہمیں ماضی پرست کہتے ہیں  ، پیپلز پارٹی جس لیے بنی کیا وہ مسائل حل ہوگئے ہیں ؟ نہتی لڑکی لڑتی رہی، ثابت کردیا کہ بندوقوں والے ایک نہتی لڑکی سے ڈرتے ہیں ، پی پی کو ماضی پرست کہنےوالے بتائیں جس لیے پارٹی بنی کیا وہ مسائل حل ہوگئے ؟ آج بھی بچے بچیاں، فورسز کے جوا ن دہشت گردوں کے ہاتھوں شہید ہو رہے ہیں ، آج بھی تخت جاتی امرا کی بادشاہت ہے ، بینظیربھٹو کبھی ضیاء اور کبھی ضیاء کی باقیات کے خلاف لڑیں ، بینظیر بھٹوکی شہادت کے بعد پاکستان کو کئی مشکلات نے گھیرا تھا، بینظیر کے بعد ملک ٹوٹنے کے قریب تھا ،صدر زرداری نے کھپے کا نعرہ لگا کر ملک بچایا ، آج بھی دہشت گردوں کو پناہ مل رہی ہے ، پاکستان پیپلز پارٹی کو نئے انداز سے منظم کرنا چاہتاہوں ، مسلم لیگ (ن)کی حکومت ہر محاذ پر ناکام ہو گئی ہے ، پاکستان کے مفادات خطرے میں ہیں ، ن لیگ کومیری باتیں دیر میں سمجھ آتی ہیں ، میں نے حکومت کو4مطالبات دیے تھے ، سپریم کورٹ کے کوئٹہ کمیشن کی رپورٹ میں میری باتیں ثابت ہوگئیں ، وزیر داخلہ استعفا دینے کے بجائے سپریم کورٹ سمیت سب کو دھمکیاں دے رہے ہیں۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ وزیر داخلہ کالعدم تنظیموں سے ملاقات کر کے اسلام آباد میں جلسے کی اجازت دیتے ہیں ، دنیا ہمیں دہشت گرد ملک بنانے کے چکر میں ہے ، مجھے دیکھنا ہے سپریم کورٹ کیا کرتی ہے ؟ ہم دنیا میں تنہا کھڑے ہیں ، میاں صاحب آپ نے کابینہ میں دہشت گردوں کے سہولت کار رکھے ہوئے ہیں ، میں کہتارہا مستقل وزیر خارجہ لے آئیں جو پاکستان کی صحیح نمایندگی کر سکے، آپ نہیں مانے آپ نے کہا ہماری حکومت کا کوئی اسیکنڈل نہیں ، میاں صاحب آپ واقعی اتنے سادہ ہیں ، پاکستان میں پوچھیں وزیراعظم کون ہے تو لوگ کہتے ہیں پاناما شریف ، نہ خود تماشہ بنیں نہ پورے نظام کو تماشہ بنائیں ، اسمبلی میں پاناما بل منظور کرنےمیں رکاوٹ ڈالی تو اپوزیشن کے احتجاج کا سامنا کرنا پڑیگا، پاناما بل منظور کرا کے عدالت میں جانا چاہتے ہیں ، میں بینظیر کا بیٹاہوں جس پر آپ نے کیا کیا ظلم نہیں کیا، آپ جیل گئے تو میری والدہ نے اے آر ڈی بنا کر آپ کو اس کا حصہ بنایا ، آپ کا وزیراعلی ٰکہتا تھا کہ زرداری کو سڑک پرگھسیٹوں گا ، میرے بزرگوں نے بڑوں کی عزت کرنا سکھایا ہے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ آپ چاہتے ہیں چھوٹے صوبوں کے حقوق چھین لیں اور میں چپ رہوں ؟ پاناما بل منظورکراکے عدالت میں جانا چاہتے ہیں ، پاناما بل منظورکراکے عدالت میں جانا چاہتے ہیں ، آپ چاہتے ہیں کہ سی پیک کو متنازع بنایاجائے اور میں چپ رہوں ؟ آپ چاہتےہیں پاناما میں پکڑے جائیں ،احتساب سے بھاگیں اورمیں چپ رہوں ؟ آپ کی پالیسی سے صنعت تباہ ہوجائے اور میں چپ رہوں، آپ چاہتے ہیں لوگ علاج سے محروم رہیں اور میں چپ رہوں، آپ غربت اور بے روزگار ی میں اضافہ کریں اور میں چپ رہوں، آپ چاہتے ہیں پاناماکمپنی میں مزید اضافہ ہو اور میں چپ رہوں، آپ کا بھائی نرسوں اور ڈاکٹر پر لاٹھی چارج کرے اور میں چپ رہوں، ہم بےگناہوں کو پھانسی ہو اور آپ کو کلین چٹ ملے اور میں چپ رہوں، میں شہید ذو الفقار بھٹو اور شہید بے نظیر بھٹو کی میراث کا وارث ہوں، مودی نہتے کشمیریوں کا خون بہائے آپ اس سے دوستی کریں اور میں چپ رہوں ، ہمیں سیاسی لانگ مارچ کی تیاری شروع کرنی ہے ، چار مطالبات منوانے کیلیے پورے ملک کا دورہ کروں گا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ