کانگو، حکومت مخالف ملیشیا کے حملوں میں 34 افراد ہلاک

141

افریقی ملک کانگو میں حکومت مخالف ملیشیا کے مختلف مقامات پر حملوں میں 34 افراد ہلاک ہو گئے۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق علاقائی عہدیدار ایمیسی کیلونڈا نے بتایا کہ یہ واقعہ کانگو کے شمالی علاقے کے مرکز بینی سے 55 کلومیٹر دور ایک قصبے ایرنگیٹی میں پیش آیا۔انھوں نے دعوی کیا کہ خوں ریز واقعات کی لہر میں اب تک7 سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

گزشتہ دوسالوں کے دوران بینی میں قتل غارت کے واقعات کا تسلسل رہا ہے جس کے باعث سینکڑوں لوگ اپنے جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔کانگو کے حکام نے ان دہشت گردانہ واقعات کا الزام ایک مسلم تنظیم الائیڈ ڈیموکریٹک فورسز پر عائد کی ہے لیکن کئی غیرجانب دار ماہرین کی رپورٹ کے مطابق کانگو آرمی کے کئی حلقوں سمیت دیگر گروہ کچھ ہلاکتوں میں ملوث ہیں۔

کانگو میں صدر جوزف کابیلی کے عہدہ چھوڑنے سے انکار کے بعد پر تشدد واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔ کانگو کی فوج کا کہنا ہے کہ جھڑپوں میں ملیشیا کے چار اراکین بھی مارے گئے۔ گذشتہ ہفتے حکومت مخالف احتجاج میں بھی 40 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ