مودی سرکار نے مغربی بنگال میں فوج تعینات کردی

95

مغربی بنگال میں مودی سرکار کی جانب سے فوج کی تعیناتی پر بھارتی راجیہ سبھا میں ہنگامہ آرائی ہوئی ہے اور اپوزیشن اراکین نے اس حساس معاملے پر مرکز سے صفائی طلب کرلی ہیں دوسری جانب مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی کا کہنا ہے کہ جب تک فوج کو واپس نہیں بلایا جاتا میں دفتر سے گھر نہیں جاوں گی۔

4-mamata-beinerjeeمودی سرکار کے انو کھے اقدام نے اپنے ہی ملک میں جمہوریت کے لئے خطرات پیدا کردئیے مرکزی حکومت نے سیاسی چپقلش کے باعث مغربی بنگال میں ریاستی حکومت کو اطلاع دیئے بغیر کئی علاقوں میں فوج تعینات کردی جس کے خلاف مغربی بنگال میں شدید مظاہرے شروع ہوگئے ہیں جبکہ بھارتی راجیہ سبھا میں بھی فوج کی تعیناتی کے معاملے پراپوزیشن اراکین نے حکومت کے خلاف شدید احتجاج کیا اترپردیش کی۔

سابق وزیراعلی مایاوتی نے کہا مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ کے ساتھ زیادتی ہورہی ہے فوج کی تعیناتی اختیارات پر حملے کے برابر  ہے کانگریس رہنما غلام نبی آذاد نے کہا کہ سنگین معاملے پر مرکزی حکومت کوصفائی دینی ہوگی۔

3-mamata-beinerjeeمغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بینرجی نے فوج کی تعیناتی کو سیاسی انتقام قرار دیا رات بھر کئی پریس کانفرنسز میں انہوں نے حکومتی اقدام کی سخت مذمت کی اس دوران وزیر اعلی مغربی بنگال کی سیکریٹریٹ میں موجود رہیں انہوں نے کہا جب تک فوج واپس نہیں جاتی دفتر سے گھر نہیں جاوں گی۔

بھارتی وزیر دفاع منوہر پاریکر نے فوج کی تعیناتی کو معمول کی کارروائی کہتے ہوئے معاملہ دبانے کی کوشش کی،دوسری طرف فوج نے ممتا کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ فوج کی باقاعدہ پریکٹس ہے اس سے کسی کو گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے. ساتھ ہی ممتا بنرجی کی طرف سے اس مسئلے کو اٹھائے جانے کے بعد فوج کو کئی جگہوں سے ہٹا لیا گیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ