حکمرانوں نے 70سال میں پاکستان کو کچھ نہیں دیا،سینیٹر سراج الحق

286

 امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیڑسراج الحق نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی سندھ اور کراچی کا کیس سینیٹ سمیت ہر جگہ لڑے گی ،کراچی کے مسائل کے حل کی چابی کراچی کے عوام کے پاس ہے، جماعت اسلامی تبدیلی اور انقلاب کی جماعت ہے اور ہم آئینی اور جمہوری طریقوں کے مطابق ملک کے ہر شعبے میں تبدیلی اور انقلاب کی جدوجہد کررہے ہیں ،ہماری جنگ قاتلوں ، لٹیروں وڈیروں ، جاگیرداروں اور شوگر مافیا کے خلاف ہے ہم کسی سے نفرت نہیں کرتے ہمارا پیغام محبت اور امن کا پیغام ہے ،پنامہ لیکس اور دبئی پراپرٹی لیکس کی صورت میں حکمرانوں کی کرپشن کے انبار کھلی آنکھ سے نظر آرہے ہیں ، قوم کی نظریں سپریم کورٹ پر لگی ہوئی ہے ۔سندھ اسمبلی میں مذہب تبدیل کرنے کے حوالے سے جو قانون بنایا ہے وہ شریعت کے خلاف ہے ۔ حکمرانوں نے پاکستان کو کچھ نہیں دیا، ہمارے 70 سال ضائع کیے گئے، آج بھی لاکھوں نوجوان مایوس ہیں۔ پاکستان کے کروڑوں بچے غربت کی وجہ سے اسکول نہیں جاسکتے۔ آج بھی ہزاروں پڑھے لکھے نوجوان بے روزگار ہیں اور یہ بے روزگار نوجوان ڈگریاں جلانے پر مجبور ہیں۔ پاناما لیکس کرپشن کا سمندر ہے، ‘آف شور کمپنیوں میں جن کا نام ہے ہر ایک سے پوچھا جائے گا’۔ پاکستان میں سب زیادہ کرپشن اسلام آباد اور پھر کراچی میں ہے، ‘کراچی میں سب سے زیادہ سندھ سیکریٹریٹ پھر لوکل گورنمنٹ میں کرپشن ہوتی ہے’۔

6-siraj

ان خیالات کا اظہار انہوں نے باغ جناح میں ورکرز کنونشن کے اختتام پر ایک بڑے اور عظیم الشان جلسہ عزم اسلامی انقلاب سے خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ جلسہ سے امیر جماعت اسلامی سندھ ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی ، امیر کراچی حافظ ن نعیم الرحمن اور نائب امیر کراچی ڈاکٹر اسامہ رضی نے بھی خطاب کیا ۔جلسے میں کراچی اور اندرون سندھ سے آئے ہوئے ہزاروں مرد وخواتین نے شرکت کی۔ علاوہ ازیں ہندو ، عیسائی اور دیگر اقلیتی نمائندوں نے بھی شرکت کی۔

سراج الحق نے مزید کہا کہ میں نا مساعد حالات میں اتنا بڑا کنونشن منعقد کرنے اور اس کے انتظامات اور میزبانی کرنے پر ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی اور حافظ نعیم الرحمن کو اور ان کی پوری ٹیم کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ باب الاسلام کا یہ کنونشن روشنی ، خوشحالی ، اسلامی اور تعلیم یافتہ پاکستان کی نوید ثابت ہوگا ۔

7-siraj

انہوں نے کہا کہ حکمرانوں نے ہمارے 70سال ضائعہ کردیے ، حکمرانوں کے حالات تو بدلے لیکن غریب عوام کی حالت نہ بدل سکی ،ہم پاکستان میں کسی خاندان کی بادشاہت کے بجائے اسلامی شریعت کی حکمرانی چاہتے ہیں اسی طریقے سے دنیا میں عزت اور آخرت میں نجات مل سکتی ہے ۔ہم عدالتوں ، ایوانوں ، تعلیمی اداروں اور زندگی کے ہر شعبے میں قرآن کی روشنی اور نور پھیلانا چاہتے ہیں ۔ جماعت اسلامی تبدیلی اور انقلاب کی جماعت ہے اور ہم آئینی اور جمہوری طریقوں کے مطابق ملک کے ہر شعبے میں تبدیلی اور انقلاب کی جدوجہد کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ ملک اسلام کے لیے بنا تھا جو لوگ لبرل اور سیکولر یا اس ملک کو کچھ اور بنانا چاہتے ہیں وہ شہداء پاکستان اور آئین سے غداری کررہے ہیں ۔جو حکمران ملک کے نظریے اور جغرافیہ کا تحفظ نہ کرسکے اسے حکمرانی کا حق نہیں ہے ۔انہو ںنے کہا کہ مطیع الرحمن نظامی بنگلہ دیش پر پھانسی پر چڑھ رہے تھے ہمارے حکمران حسینہ واجد کی طرح بھارت سے دوستیاں بڑھا رہے تھے ۔انہوںنے کہا کہ ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے سندھ کے لیے جو ایجنڈا دیا ہے میں ان کے ساتھ ہوں اور میں سندھ  اور کراچی کا کیس سینیٹ سمیت ہر جگہ لڑوں گا ۔

8-siraj

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ کراچی علم ، روشنی، مدراس تجار ت ، تہذیب اور ترقی کا شہر تھا اس کی قیادت لیاقت علی خان ، شاہ احمد نورانی ، پروفیسر غفور ، عبدالستار افغانی اور نعمت اللہ خان جیسی شخصیا ت کے پاس تھی لیکن پھر کیا ہوا کراچی کفن ، تابوت ، بوری بند لاشوں ،دہشت گردی اور بھتہ خوری کا شہر بن گیا ۔یہ سب کچھ نااہل اور عوام دشمن قیاد ت کی وجہ سے ہوا ہے ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ کراچی میں ہزاروں ٹن کچرہ موجود ہے ، دنیا چاند اور مریخ پر جارہی ہے اور کراچی والے پانی اور بنیادی ضروریا ت کا مطالبہ کررہے ہیں، کراچی کے مسائل کے حل کی چابی کراچی کے عوام کے پاس ہے ،جماعت اسلامی میں ہر زبان ، صوبے ، علاقے اور مسلک کے لو گ شامل ہیں اور یہ ایک خوبصورت گلدستہ ہے اس کی خوشبواور روشنی اندھیروں کو اجالے میں تبدیل کرے گی ۔انہوں نے کہا کہ تھر میں جب ہزاروں بچے مررہے تھے تو لاڑکانہ میں ایک ارب روپے کا جشن منایا گیا اور ایک حکومتی اہلکار نے کہا کہ یہ تو مرتے رہتے ہیں میڈیا نے فساد مچایا ہوا ہے۔

9-siraj

سرا ج الحق نے کہا کہ سندھ اسمبلی میں مذہب تبدیل کرنے کے حوالے سے جو قانون بنایا ہے وہ شریعت کے خلاف ہے میں مراد علی شاہ نہیں بلکہ زرداری سے کہنا چاہتاہوں کہ ذوالفقار علی بھٹو نے جو آئین بنایا تھا وہ ملک جوڑنے کے لیے تھا ان کی پارٹی آئین سے بے وفائی کررہی ہے زرداری خود ہی یہ قانون واپس لے لیں ورنہ ہم سمجھیں گے کہ ان کی پارٹی اپنے بانی کے بنائے ہوئے آئین کو نہیں مانتی ۔

سراج الحق نے کہا کہ نادرا نے کراچی میں لاکھوں لوگوں کے کارڈز کینسل کیے اور شہریوں کو شناختی کارڈ کے حصول میں بے شمار پریشانیوں کا سامنا ہے حالانکہ نادرا کا کام شہریوں اور عوام کو سہولت دینا ہے ۔انہوں نے کہا کہ پانامہ لیکس اور دبئی پراپرٹی لیکس کی صورت میں حکمرانوں کی کرپشن کے انبار کھلی آنکھ سے نظر آرہے ہیں ، قوم کی نظریں سپریم کورٹ پر لگی ہوئی ہے امید ہے کہ سپریم کورٹ کرپشن کے خاتمے کے لیے مؤثر اقدامات کر ے گی ۔ انہو ں نے کہا کہ ہماری جنگ قاتلوں ، لٹیروں وڈیروں ، جاگیرداروں اور شوگر مافیا کے خلاف ہے ہم کسی سے نفرت نہیں کرتے ہمارا پیغام محبت اور امن کا پیغام ہے ہماری تحریک جاری رہے گی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ