جعفر ا??سپر?س ب?? تبا?? س? بچ گئ?

99

جیکب آباد: ڈسٹرکٹ جیل کےقریب ریلوےٹریک پردھماکے کے نتیجے میں جعفر ایکسپریس کی تین بوگیاں پٹری سے اتر گئی، دھماکے میں 6 افراد زخمی بھی ہوئے۔

ریلوے پولیس کے مطابق جیکب آباد کے علاقے ڈسٹرکٹ جیل کے قریب نامعلوم افراد نے ریلوے ٹریک کو دھماکہ خیز مواد سے اڑادیا جس کے نتیجے میں وہا ں سے گزرنے والی جعفر ایکسپریس کا انجن اور تین بوگیاں پٹری سر اتر گئی حادثے میں چھ مسافر معمولی زخمی ہوگئے۔

پولس زرائع کے مطابق ٹرین راولپنڈی سے کوئٹہ جارہی تھی کہ جعفر آبادکے علاقے سینٹرل جیل کے قریب اسے دہشت گردی کا نشانہ بنایا گیا دھماکے کےبعدٹرین کی آمدورفت معطل ہوگئی ہیں ۔

واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لے کر مشتبہ افراد کی تلاش شروع کردی۔

بم ڈسپوزل اسکواڈ نے موقع پر پہنچ کر متاثرہ جگہ کا معائنہ کیا اور دھماکےکے شواہد اکھٹے کئے۔

ابتدائی معلومات کےمطابق دھماکہ ریمورٹ کنٹرول ڈیوائس سے کیا گیا جس میں پانچ کلو سے زائد بارودی مواد کا استعمال کیا گیا دھماکے کے نتیجے میں متاثرہ جگہ پر 10 سے 12 فٹ گہرا گڑھا پڑ گیا ۔

بم ڈسپوزل اسکواڈکے مطابق دھماکے کے باعث 700 فٹ ریلوے لائن کو نقصان پہنچا جس کے مرمت کے لئے 7 سے آٹھ گھنٹے درکار ہونگے۔

وزیراعلی سندھ نے جعفرآباد بم دھماکے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ریلوےٹریک پردھماکاقابل مذمت ہےدھماکے کرنے والوں کو فوری گرفتارکیاجائے۔

قائم علی شاہ نے آئی جی سندھ سے واقعے کی فوری رپورٹ طلب کرلی ہے جبکہ انتظامیہ کو ہدایت جاری کی ہے کہ امدادی کام کو تیز کرتے ہوئے جلد از جلد ٹریک کو بحال کیا جائے،

واضح رہے کہ ا بھی تک کسی بھی تنظیم نے ٹرین دھماکے کی ذمے داری قبول نہیں کی ہے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ